میونسپل کمیٹی فتح جنگ کا اجلاس فنڈز کی غیر منصفانہ تقسیم پر اپوزیشن اراکین کا احتجاج۔

فتح جنگ(تحصیل رپو رٹر)میونسپل کمیٹی فتح جنگ کا اجلاس فنڈز کی غیر منصفانہ تقسیم پر اپوزیشن اراکین کا احتجاج شہر کی 12میں سے صرف 7وارڈز پر نوازشات کیوں کنوینئر نے جواب دیا کہ فنڈز تقسیم اکثریتی فیصلہ ہے ضمنی انتخابات کا شیڈول جاری ہونے کے بعد ترقیاتی فنڈزکی منظوری پر بھی ممبران کا اعتراض سامنے آگیا چیف آفیسر حیدر علی چٹھہ کی ڈیوٹی سے اکثر غیر حاضر رہنے کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا گیا موصوف دوران اجلاس 12بجے آفس پہنچے چیف آفیسر کی لگژری گاڑی رکی تو ایک سرکاری ملازم نے دروازہ کھولا دوسرے نے فائلیں اٹھائیں تو صاحب بہادر اجلاس میں آکر سٹیج پر بیٹھ گئے کونسلر حاجی رفیع چھاچھی نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان تبدیلی اپنی فائلیں خود اٹھا کر تبدیلی کا دعویٰ کر رہا ہے جبکہ یہاں الٹی گنگا بہہ رہی ہے (ن) لیگ کے کونسلر ملک بشیر حیات اور حاجی محمد اعظم نے کہا کہ چیف آفیسر کی ڈیوٹی سے غیر حاضری کا کوئی قانونی یا اخلاقی جواز نہیں اگر نوکری کرنی ہے تو ڈیوٹی ٹائم میں دفتر موجود رہنا پڑے گا چیف آفیسر حیدر علی چٹھہ نے کہا کہ میں تو عید کے دن بھی حاضر تھا جس پر اراکین نے کہا کہ آپ نے کسی پر احسان نہیں کیا حکومت سے عوام کی خدمت کرنے کی تنخواہ لیتے ہیں آج 12بجے دفتر آنے کا کوئی جواز نہیں دو روز قبل ہفتہ کے دن بھی آپ دفتر سے غیر حاضر تھے (ن) لیگی کونسلر اپنی ہی سابقہ حکومت کے دور میں شروع ہونے والے 47کروڑ کے واٹر سپلائی منصوبے کے خلاف پھٹ پڑے ملک بشیر حیات نے پبلک ہیلتھ کی کرپشن اور میگا پراجیکٹس میں ناقص کام پر دھواں دھار خطاب کیا چیئرمین ملک عابد داؤد کو ذمہ دار ٹھہرانا چاہا تو انہوں نے کہا کہ آپ خود ذمہ دار ہیں میرا تعلق (ن) لیگ سے نہیں ہے اس کی ذمہ داری (ن) لیگیوں پر عائد ہوتی ہے جس پر بشیر حیات نے کہا کہ چیئرمین صاحب آپ بھی (ن) کے چیئرمین ہیں شیر کے نشان پر ہم نے آپ کو ووٹ دیے حاجی محمد رفیع چھاچھی نے کہا کہ سیوریج لائنوں کی غلط تنصیب کئی علاقے بارش کے دنوں میں زیر آب آجاتے ہیں اب اگر ایسا ہوا میں ایف آئی آر درج کراؤں گا کونسلر بشیر حیات نے عید قربان پر آلائشوں کے پارک میں دفن کرنے پر تنقید کی اور کہا کہ اس سے زیر زمین واٹر سپلائی سکیم متاثر ہو سکتی ہے چیئرمین ملک عابد داؤد نے کہا کہ عید قربان پر صفائی کے عملہ نے مثالی کارکردگی کا مظاہرہ کیا تنقید کرنے والے کبھی اچھے کام کی تعریف بھی کر دیا کریں جس پر اراکین نے ڈیسک بجا کر صفائی کے
عملہ کی حوصلہ افزائی کی چیئرمین نے بتایا کہ 1990میں بھرتی ہونے والے صفائی کے عملہ کی تعداد اس وقت کم ہو چکی ہے کئی ریٹائر ہو گئے ہیں دو سالوں میں 26تحریری درخواستیں حکومت پنجاب کو سینٹری ورکر بھرتی کرنے کیلئے ارسال کیں مگر کوئی جواب موصول نہ ہوا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Facebook

Get the Facebook Likebox Slider Pro for WordPress